Sectarianism

ڈیرہ اسماعیل خان میں ٹارگٹ کلنگ، ا مام بارگاہ کے متولی سمیت 2 افراد قتل

ڈی آئی خان/ لاہور (نوائے وقت رپورٹ+ خصوصی نامہ نگار) ڈیرہ اسماعیل خان میں ٹارگٹ کلرز نے دو افراد کو قتل کر دیا۔ نجی ٹی وی کے مطابق ڈی آئی خان میں موٹر سائیکل سوار حملہ آوروں نے امام بارگاہ کے متولی مطیع اللہ کو فائرنگ کر کے قتل کر دیا۔ سی سی ٹی وی ویڈیو میں حملہ آوروں کے چہرے واضح دیکھے جا سکتے ہیں۔ سابق نائب ناظم تیمور بلوچ کو بھی فائرنگ کر کے قتل کر دیا گیا۔ فائرنگ کے دونوں واقعات کے ملزمان فرار ہو گئے۔ مجلس وحدت المسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے امام بارگاہ کے متولی کو دہشت گردی کا نشانہ بنائے جانے پر غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ دو ہفتوں کے درمیان دہشت گردی کا دوسرا واقعہ خیبر پی کے کی ’’مثالی پولیس‘‘ کی ناکامی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ محکمہ پولیس کی غفلت اورفرض نا شناسی کے باعث ڈی آئی خان ملت تشیع کی قتل گاہ بنا ہوا ہے۔ یہ طرز حکومت ہمارے لیے کسی طور قابل قبول نہیں۔ خیبر پی کے میں دہشت گردوں کی سرکوبی اور ملت تشیع کے تحفظ کے لیے حکومت کو اپنا آئینی کردار موثر انداز میں ادا کرنا ہو گا۔